وائرس کے ماخذ سے متعلق مشترکہ تحقیقاتی رپورٹ اس کٹھن آزمائش سے نمٹنے میں مددگار

0

چین کی ریاستی کونسل نے بائیس تاریخ کو کووڈ -۱۹ وائرس کے سراغ سے متعلق ایک پریس کانفرنس کا اہتمام کیا ۔ قومی صحت کمیشن کے نائب سربراہ زنگ ای شن نے بتایا کہ رواں برس تیس مارچ کو عالمی ادارہ صحت نے چین میں وائرس کی موجودگی سے متعلق ایک مشترکہ تحقیقاتی رپورٹ  پیش کی  جو عالمی سطح پر وائرس کی تحقیق کے حوالے سے عمدہ شروعات  کی مظہر ہے ۔  اس رپورٹ کی اشاعت کے بعد بے شمار سائنسی شواہد  ثابت کرتے ہیں کہ یہ رپورٹ معتبر اور مستند  ہے جو سائنسی اور تاریخی “جائزہ معیار” پر پورا اترتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ رواں سال کے اوائل میں عالمی ادارہ صحت کے  ماہر گروپ نے دورہ چین کے دوران وائرس کی کھوج سے متعلق کام کیا۔چین نے  کشادگی ، شفافیت ، تعاون اورسائنسی اصولوں کے تحت ڈبلیو ایچ او کے ماہر گروپ کی مکمل حمایت کی ۔ زنگ ای شن نے کہا کہ نوول کورونا وائرس کا  سراغ بلاشبہ ایک سائنسی مسئلہ  ہے ۔ ہم  اسے  سیاسی رنگ دینے  کی مخالفت کرتے ہیں۔ ہم سمجھتے ہیں کہ وائرس کے سراغ سے متعلق دوسرے مرحلے کو  پہلے مرحلے کی بنیاد پر آگے بڑھانا چاہیے اور ڈبلیو ایچ او کی قرارداد 173.1کی روشنی میں ممبر ممالک کے ساتھ تبادلہ خیال اور مشاورت کی جائے۔ 

SHARE

LEAVE A REPLY