سیاسی جماعتیں درست سمت میں عوام کی خوشحالی اور انسانوں کی فلاح بہبود کے لیے اپنی ذمہ داریاں سنبھالیں ، شی جن پھنگ کاکمیونسٹ پارٹی آف چائنا اور ورلڈ پارٹی لیڈرز کے اجلاس سے خطاب

0

 کمیونسٹ پارٹی آف چائنا اور ورلڈ پارٹی لیڈرز کا سربراہ اجلاس۶جولائی کو ویڈیو لنک کے ذریعے منعقد ہوا۔ سی پی سی سنٹرل کمیٹی کے جنرل سیکریٹری اور صدر مملکت، شی جن پھنگ نے اجلاس سے خطاب کیا۔

شی جن پھنگ نے نشاندہی کی کہ مشترکہ چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کیلئے انسانوں کو مل کر جدوجہد کرنی چاہیے  اور یہی واحد راستہ ہے۔سیاسی جماعتوں کو درست  سمت  میں جاتے ہوئے  عوام کی خوشحالی اور انسانوں کی فلاح وبہبود کے لیے اپنی ذمہ داری نبھانی چاہیئے۔

انہوں نے زور دیا کہ عظیم دور میں عظیم ڈھانچے کی ضرورت  ہے اور عظیم ڈھانچے کے لیے عظیم روح کی ضرورت ہے۔صرف اپنے ملک کو ترجیح دینے سے دنیا چھوٹی اور مسابقت سے بھر جاتی ہے۔ تاہم اگر مشترکہ مستقبل کا نقطہ نظر اپنایا جائے تو ہر جگہ تعاون کے مواقع موجود ہیں۔

شی جن پھنگ نے پرزور الفاظ میں کہا کہ ہمیں بنی نوع انسان کے مستقبل کے لیے انتہائی ذمہ دار رویے اور وسیع تر دماغ  کے ساتھ  مختلف تہذیبوں کی قدر و منزلت کو سمجھنا، مختلف ممالک کے عوام کی اپنی اقدار  کے مطابق راستے کی تلاش کا احترام کرنا ، اور  بنی نوع انسان کی مشترکہ قدر کو  ٹھوس طور پر مختلف ممالک کے عوام کے مفادات کو پورا کرنے کے تجربات میں  شامل کرنا چاہئیے۔

شی جن پھنگ نے کہا کہ انسان کی خوشی کی تلاش میں ،صرف ایک ملک اور ایک قوم کو یاد نہیں کیا جاسکتا۔ دنیا کے تمام ممالک اور تمام قومیتوں کو مساوی ترقی کے مواقع اور حقوق سے لطف اندوز ہونا چاہئے۔

شی جن پھنگ نے زور دیا کہ عالمی ترقی میں مساوات،استعدادکار،ہم آہنگی کو فروغ دینا چاہیئے،ٹیکنالوجی کی ناکہ بندی ،سائنس و ٹیکنالوجی کے فرق اور ترقی کی ڈی کپلنگ کی مشترکہ مخالفت کی جانی چاہیے۔دوسرے ممالک کی ترقی اور عوام کی زندگی کو نقصان دینے والے تمام سیاسی کھیل ناکام ہونگے۔

انہوں نے کہا کہ جمہوریت کی تکمیل کے لیے کئی طریقہ کار ہوتے ہیں ۔یہ کسی انفرادی ملک کے ذاتی مفادات کی بجائے مختلف ممالک  کے عوام کے حقوق و مفادات  کے مطابق ہونے چاہیے۔

انہوں نے زور دیا کہ ماڈرنائزیشن کے لئے کوئی متعین نمونہ نہیں ہے ، اور سب سے بہتر وہی ہے جو آپ سے  مطابقت رکھتا ہو۔ شی جن پھنگ نے کہا کہ ہر ملک کے  اپنے حالات کے مطابق ماڈرنائزیشن کے راستے   کی تلاش کرنے کی کوششوں کا احترام کیا جانا چاہئے۔

شی جن پھنگ  نے اس بات پر زور دیا کہ سی پی سی ایک عظیم طاقت کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریوں کو نبھائے گی اور بنی نوع انسان کی خوشحالی  میں اضافے کے لئے   نئی خدمات سرانجام  دے گی۔ غربت کا خاتمہ تمام ممالک کے عوام کی مشترکہ خواہش ہے اور ایک اہم مقصد ہے جس کے حصول کے لئے تمام ممالک کی سیاسی جماعتیں کوشاں ہیں۔ سی پی سی کی 18 ویں قومی کانگریس کے بعد سے ، 98.99 ملین دیہی غریب عوام کو چین کے موجودہ معیارات کے تحت غربت سے نکال دیا گیا ہے ، اور پائیدار ترقی کے لئے اقوام متحدہ کے 2030 ایجنڈے کی غربت میں کمی کا مقصد شیڈول سے 10 سال پہلے ہی حاصل کرلیا گیا ہے .سی پی سی انسانیت کی غربت میں کمی کے عمل میں مزید چینی  طریقہ کار  اور چینی  قوت فراہم کرنے  کیلئے تیار ہے۔

شی جن پھنگ نے کہا کہ کمیونسٹ پارٹی آف چائنا عوام کو مرکزی حیثیت دینے کے نظریے پر گامزن ہے۔ سی پی سی زمان ومکان کے وسیع تناظر  میں انسانی ترقی کے موضوعات  کو مدنظر رکھتے ہوئے چینی عوام کو ساتھ لے کر بہتر مستقبل کے لیے  بھر پور کوشش کرنے اور مختلف  ممالک کی سیاسی جماعتوں کے ساتھ مل کر کام کرنے  کیلئے تیار ہے۔

شی جن پھنگ نے پرزور الفاظ میں کہا کہ سی پی سی نے چینی عوام کو ساتھ لے کر چینی خصوصیات کے حامل سوشلسٹ راستے کی تلاش کی۔ تاریخ اور تجربات  نے ثابت کیا کہ  یہ راستہ نہ صرف درست ہے بلکہ مستحکم اور شاندار بھی ہے۔ ہم اس روشن راستے پر گامزن رہیں گے، جس سے نہ صرف اپنی ترقی بلکہ پوری دنیا کی ترقی میں مدد ملے گی۔

شی جن پھنگ نے کہا کہ موجودہ عالمی نظام اور نظم و نسق کا کلیدی نظریہ کثیرالجہتی ہے۔ہمیں کثیرالجہتی کی آڑ میں یک طرفہ پسندی کی کارروائی ،تسلط پسندی اور طاقت کی سیاست کی مخالفت  کرنی چاہیئے۔

انہوں نے زور دیا کہ سی پی سی مختلف ممالک کی سیاسی جماعتوں اور سیاسی تنظیموں کے ساتھ مل کر تاریخ کی درست طرف کھڑی رہے گی  اور انسانی ترقی کی طرف کھڑی رہے گی،بنی نوع انسان کے ہم نصیب معاشرے کی تشکیل اور مزید خوبصورت دنیا کی تعمیر کے لیے مزید خدمات سرانجام دیتی رہے گی۔

SHARE

LEAVE A REPLY