ہم خیال ممالک کی نمائند گی کرتے ہوئے انسانی حقوق کونسل میں چین کی جانب سے آزادی اظہار رائے کے غلط استعمال پر تحفظات کا اظہار

0

دو  جولائی  کو  جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 47 ویں اجلاس میں آزادی اظہار رائے سے متعلق خصوصی ریپورٹر کے ساتھ بات چیت کا انعقاد ہوا۔ اقوام متحدہ میں چین کے مستقل مشن کے  منسٹر  جیانگ ڈوان نے شمالی کوریا ، بیلاروس ، شام ، زمبابوے ، سری لنکا ، لاؤس ، ایران ، وینزویلا ، تاجکستان  اور  نکاراگواسمیت دیگر ممالک کی جانب سے مشترکہ بیان دیتے ہوئے آزادی اظہار رائے کے نام پر غلط معلومات کے اجرا سے انسانی حقوق  کو پہنچنے والے نقصان پر خدشات کا اظہار کیا۔
انہوں نے کہا کہ   کچھ ممالک سیاسی مقاصد کے لئے غلط معلومات پھیلانے ، انسانی حقوق کی آڑ میں دوسرے ممالک کی توہین کرنے ، دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرنے اور یکطرفہ طور پر جابرانہ اقدامات پر عمل درآمد  کرنے سمیت انسانی حقوق کونسل کو اپنے مقاصد کے لئے استعمال کرنا چاہتے ہیں جو قابل تشویش ہے۔
یہ  عمل   اقوام متحدہ کے چارٹر کے مقاصد اور اصولوں کی سنجیدگی سے خلاف ورزی  ہے ،اور انسانی حقوق کونسل کے کام میں عالمگیریت ، غیر جانبداری ،تعمیری مکالمے اور تعاون کے اصولوں کی بھی خلاف ورزی  ہے. ہمیں اس طرح کے طریقہ کار پر تشویش ہے۔ ہمیں ان ماہرین کے حوالے سے بھی تحفظات ہیں جنہوں نے اس طریقہ کار کا غلط استعمال کرتے ہوئے مغربی میڈیا اور سیاستدانوں کی جانب سے پھیلائی جانے والی غلط خبروں  کو کچھ ممالک کے خلاف امتیازی طور پر استعمال کیا۔

SHARE

LEAVE A REPLY