دنیا میں سنکیانگ کے بارے میں زیادہ سے زیادہ معروضی اور منصفانہ آوازیں آرہی ہیں ، چینی وزارت خارجہ

0

حال ہی میں سنگا پور  کے اخبار “لیان حے زاؤباؤ” نے ایک تبصرہ تحریر کیا جس میں سنکیانگ میں نام نہاد ” جبری مشقت” کو بے بنیاد قرار دیا گیا ہے۔ اس حوالے سے ،چینی  وزارت خارجہ کے ترجمان چاؤ لی جیان نے 28 تاریخ کو کہا ہے کہ کچھ عرصے سے ، دنیا بھر سے سنکیانگ کے بارے میں زیادہ سے زیادہ معروضی اور منصفانہ آوازیں آ رہی ہیں۔جبکہ اس حوالے سے مغربی میڈیا تعصب سے بھرا ہوا۔ انہوں نے کہا کہ اس پس منظر میں  سنکیانگ  سے متعلق معروضی اور منصفانہ خبریں قیمتی ہیں۔مذکورہ مضمون نگار    نے دس برس تک سنکیانگ میں کام کیا  تھا  ۔ انہوں  نے اپنے مضمون میں سنکیانگ میں نام نہاد “جبری مشقت”  کو بے بنیاد ہے ، لغو  اور جہالت پر مبنی قرار دیا ہے۔اپنے بیان میں چاؤلی جیان نے “ورلڈ نیوز سنڈیکیٹ” ویب سائٹ پر متعلقہ مضامین ،   ناروے  کے شہر فلورن   کے  سابق میئر کی متعلقہ خصوصی رپورٹوں ، فرانسیسی مصنف ویواس کی کتاب ” ویغور قومیت سے متعلق جعلی خبروں کا   خاتمہ “، امریکہ کی  آزاد نیوز ویب سائٹ ” گرے زون” سمیت دیگر  نیوز ویب سائٹس کی  معروضی اور منصافانہ خبروں کا حوالہ بھی دیا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ مغرب تعصب کا چشمہ اتار کر سنکیانگ  کے حوالے سے سچ لکھے گا۔

SHARE

LEAVE A REPLY