امید ہے کہ نئی امریکی انتظامیہ ٹرمپ انتظامیہ کی چین کے بارے میں غلط پالیسیوں سے سبق سیکھے گی اور چین امریکہ تعلقات کو معمول پر واپس لائے گی، چینی وزارت خارجہ

0

چھبیس جنوری کو منعقدہ چینی وزارت خارجہ کی رسمی پریس کانفرنس میں کچھ صحافیوں نے سوال کیا کہ امریکی وائٹ ہاؤس کے ترجمان نے پچیس تاریخ کو ایک بیان میں کہا کہ بائیڈن انتظامیہ چین کے ساتھ “سخت مقابلے” کےلئے “اسٹریٹجک صبر” استعمال کرے گی۔ اس حوالے سے چین کا کیا ردعمل ہے؟
چینی وزارت خارجہ کے ترجمان چاؤ لی جیان نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ گزشتہ کچھ سالوں کے دوران ٹرمپ انتظامیہ نے سمتی غلطیاں کی ہیں، اور چین کو اسٹریٹجک حریف یہاں تک کہ ایک خطرہ سمجھتی رہی ہے ، اور اس بنیاد پر چین کے داخلی امور میں مداخلت اور چین کے مفاد کو نقصان پہنچانے کیلئے سلسلہ وار غلط اقدامات اختیارکرتی رہی ہےجس کے نتیجے میں دونوں ممالک کے مابین سفارتی تعلقات کے قیام کے لمبے عرصے بعد انتہائی سنگین صورتحال پیدا ہوگئی ہے، جو دونوں ممالک کے عوام کے مفاد میں نہیں ہے۔
چاؤ لی جیان نے مزید کہا کہ تعاون دونوں فریقوں کے لئے واحد صحیح انتخاب ہے۔ ہمیں امید ہے کہ امریکہ کی نئی انتظامیہ چین کے بارے میں ٹرمپ انتظامیہ کی غلط پالیسی سے سبق سیکھے گی، چین اور چین- امریکہ تعلقات کو معقول انداز سے دیکھے گی ، چین کے بارے میں مثبت اور تعمیری پالیسی اپنائےگی ، اور چین-امریکہ تعلقات کی صحت مند اور مستحکم ترقی کو معمول پر واپس لانے کی کوشش کرے گی۔

SHARE

LEAVE A REPLY