عالمی برادری آسٹریلوی ادارے کے چین مخالف بیانیے کی مذمت کرے گی، چینی وزارت خارجہ

0

چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان وانگ وین بین نے 17 تاریخ کو باقاعدہ پریس کانفرنس میں کہا کہ چین کو امید ہے کہ آسٹریلوی معاشرے کے تمام شعبے اور بین الاقوامی برادری اپنی آنکھیں کھلی رکھے گی ، جھوٹ اور سچ میں فرق کرے گی اور چین مخالف اداروں جیسے آسٹریلین انسٹی ٹیوٹ فاراسٹریٹجک پالیسی (اے ایس پی آئی) کی مشترکہ طور پر مذمت اور مزاحمت کرے گی۔ آسٹریلیائی نشریاتی کارپوریشن کے مطابق ، آسٹریلین انسٹی ٹیوٹ آف اسٹریٹجک پالیسی نے حال ہی میں چینی کمیونسٹ پارٹی کو ایک بار پھر بدنام کرنے کے لئے ایک رپورٹ جاری کی ہے۔رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ اس انسٹی ٹیوٹ کو آسٹریلیائی محکمہ دفاع اور امریکی محکمہ خارجہ کی مالی اعانت حاصل ہے۔

وانگ بین نے متعلقہ سوالات کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ آسٹریلیائی میڈیا نے بار بار یہ انکشاف کیا ہے کہ آسٹریلوی ادارہ برائے اسٹریٹجک پالیسی کو چین مخالف افواہوں کو جنم دینےکے لئے امریکی وزارت دفاع ، سفارتی ایجنسیوں اور اسلحہ فروشوں سے طویل عرصے سے مالی اعانت مل رہی ہے۔

 وانگ وین بین نے اشارہ دیا کہ حالیہ رپورٹ  ایک اور مثال ہے کہ آسٹریلین انسٹی ٹیوٹ برائے اسٹریٹجک پالیسی  اپنےڈونرز کے مفادات کا تحفظ کررہا ہے اور چین مخالف بیانیے کو فروغ دینے کے ایک آلہ کار کے طور پر کام کر رہا ہے۔ یہ ادارہ ایک افواہ ساز فیکٹری بن چکا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY